Oops! It appears that you have disabled your Javascript. In order for you to see this page as it is meant to appear, we ask that you please re-enable your Javascript!

میری “تربیت” تھوڑی خراب ہے

Print Friendly, PDF & Email

یہ بلکل سچا واقعہ ہے۔ اردو ہماری مادری زبان نہیں ہے اس لیے میرے ساتھ اور میرے جیسے بے شمار لوگوں کے ساتھ المیہ یہ ہے کہ ہم اردو کے بے شمار لفظوں کو غلط ادا کرتے ہیں ، اور تذکیروتانیث کی بھی سمجھ نہیں رکھتے ۔

ہمارے ابو کی اردو بھی تذکیروتانیث اور صحیح تلفظ سے آزاد ہوتی ہے۔ ایک دن میں بھی ابو کے ساتھ مارکیٹ جارہا تھا تو راستے میں ہماری ملاقات ہمارے ایک جاننے والے (پنجابی) سے ہوئی ۔ ابو فوراََ ان کے ساتھ بغل گیر ہوئے اور احوال پرسی کرتے ہوئے پوچھنے لگے۔۔ ” کیسی تربیت ہے سلمان بھائی آپ کی ؟”
یقین کریں میرے منہ میں چیونگم تھی مگر ابو کے منہ سے یہ جملہ سن کر سچ میں چیونگم چھلانگ مار کے منہ سے باہر آگئی۔ مگر اللہ بھلا کرے سلمان صاحب کا ، ماتھے پر شکن لائے بغیر گرم جوشی سے جواب دیا ۔” شکر ہے بلتی بھائی (ہم بلتستان سے ہیں ) ، کدھر جارہے ہیں دونوں باپ بیٹے؟”

خیر مختصر ہم وہاں سے گھر آگئے ۔ پھر موقع پا کر میں نے ابو سے کہا ، “ابو جان جب ہم کسی سے ملتے ہیں تو ہمیں “تربیت ” کے بارے میں نہیں بلکہ “طبیعت” کے بارے میں پوچھنا چاہیے۔ ” تربیت ” کے بارے میں پوچھنے سے دوسرا بندہ برا مان سکتا ہے ۔ لہذا آپ کی تربیت کیسی ہے نہیں بلکہ آپ کی طبیعت کیسی ہے ۔ ایسے پوچھنا چاہیے”۔ابو نے خاص توجہ تو نہیں دی ۔ بس اتنا کہا “ارے ٹھیک ہے ٹھیک ہے آئندہ خیال رکھوں گا”۔

یہ بھی پڑھئے:   کھانسیانہ تحریر

خیر کچھ دنوں بعد ہمیں پیرودھائی کسی کام سےجانا پڑا۔ کام نمٹانے کے بعد واپسی پہ ہم ویگن میں بیٹھ گئے۔ ویگن میں اکثر ابو کی طبیعت خراب ہوتی ہے ، مطلب دل خراب ہوتا ہے اس لئے ان کی ہمیشہ کوشش ہوتی ہے کہ سیٹ کے شیشے والی طرف پر بیٹھیں۔ خیر ابو شیشے والی طرف بیٹھ گئے اور میں ابو کے ساتھ ۔ ابو نے طبیعت خراب ہونے کے ڈر سے ویگن کی کھڑکی کھلی رکھی حالانکہ کافی ٹھنڈی ہوا چل رہی تھی ۔ باقی سواریوں کا اعتراض کرنا تو بنتا تھا لہذا ایک صاحب بول اٹھے “خان صاحب آپ پلیز کھڑکی بند رکھیں کافی ٹھنڈی ہوا آرہی ہے ہمیں سردی لگتی ہے”۔

اب یہاں پر ابو نے کہنا تھا کہ “میری طبیعت خراب ہے ” مگر ابو نے ادھر بھی وہی غلطی دہرائی ۔ ابو کہنے لگے “یار معاف کرنا ” میری تربیت تھوڑی خراب ہے۔ اس لیے میں نے کھڑکی تھوڑی کھلی رکھی ہے”۔
ساجد علی ساحل

Views All Time
Views All Time
328
Views Today
Views Today
1

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: