آئیں قلم کار کا حصہ بنیں

Print Friendly, PDF & Email

قلم کار سے میرا ناطہ جڑے تقریبا آٹھ ماہ ہوئے ہیں لیکن قلمکار کو بنے دو سال کا عرصہ بیت گیا جو کہ سب ٹیم ممبرز کے ٹیم ورک کی بدولت ممکن ہوا۔ قلم کار سے آشنائی لکھنے کے حوالے سے ہوئی اور پھر ایڈمن ٹیم کا ممبر بننے کے لیے ہمارے ایڈمن ملک قمر صاحب نے پوچھا (جو کہ بہت ہی شریف النفس انسان ہیں غلطی کسی کی ہو تو یہ ناحق شرمندہ ہوتے رہتے ہیں) تو میں نے حامی بھر لی۔ میں سمجھتی تھی کہ یہ صرف ایک فیس بک ایڈمن گروپ کی بات کر رہے ہیں۔ لیکن اس کے بعد صحیح معنوں میں ایڈمن بننے کا پتہ چلا اور چل رہا ہے ۔ کیونکہ معیار پر کوئی سمجھوتہ نہیں چاہےبال سفید ہو جائیں۔ بہت سی آن لائن ویب سائیٹس دیکھی ہیں جہاں پر ایک بہت عمدہ تحریر کا حسن اس میں موجود لاتعداد املاء کی غلطیوں اور الفاظ کی تصحیح نہ ہونے کی وجہ سے ماند ہوجاتا ہے جو کہ قلم کار پر شاذو نادر ہی کسی تحریر میں ملے گا ہم تحریر اگر بروقت مصروفیت کی بناء پر پبلش نہ کر سکیں تو اس کی ایک اہم وجہ ہمیشہ یہی ہوئی ہے کہ ایڈیٹنگ کو ہمارے ہاں بہت اہمیت دی جاتی ہے۔

ایڈیٹنگ کے لئے ہماری انچارج ام رباب ہیں۔ جو بہت قابل خاتون ہیں ان سے بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہےاور میری ایڈٹ کی ہوئی تحریروں میں جب اصلاح کرتی ہیں تو لگتا ہے ابھی بہت کچھ سیکھنے کو باقی ہےاور میری خوش قسمتی ہے کہ آغاز سفر میں اتنے قابل اور رہنمائی کرنے والے لوگ ملے۔ فرح رضوی نرم طعبیت اور ہنستی مسکراتی طبیعت کی مالک ہیں۔بے عنوان تحریر کا عنوان دینے کی ذمہ داری ان کے ذمہ ہے۔ اس کے بعد ان ٹیم ممبرز کا بھی ذکر ہو جائے جن کے دم سے سب رونقیں ہیں جن میں مدیحہ سید، عظمیٰ حسینی ، ملک قمر عباس، بلال حسن، شاہ سوار، وقاص اعوان اور میثم زیدی ہیں۔ جن کی دانشوری اور سیاسی گفتگو اتنی دقیق ہوتی ہے کہ بعض اوقات میں بس ان کی تحریر پڑھ کر گھوم جاتی ہوں۔ اللہ ان کے علم میں مزید اضافہ فرمائے اور ہم چک آتے رہیں۔ آخر میں دو ایسے لوگوں کا ذکر جن کے زیر سایہ ہم سب ایک دوسرے سے ملے ہیں اور قلم کار پر لکھنے کا آغاز بھی حیدر جاوید سید صاحب کا نام دیکھ کر کیا تھا۔ بڑوں کا ساتھ ہمیشہ ہی بہت بابرکت ہوتا ہے اور ہم سب میں باہمی احترام اور اعتماد کی فضا قائم کرنے میں ہمارے قابل احترام ایڈیٹر حیدر جاوید سید صاحب اور عامر حسینی صاحب ہی ہیں۔ جن کا وسیع علم اور تجربہ ہم جیسے نو آموز لوگوں کے لیے بہت بڑی بات ہے۔ ان کا ساتھ ہی ہم سب کو جوڑے ہوئے ہے کیونکہ سب کے دل اور نگاہ میں ان کے لئے بہت عزت اور احترام ہے جس کی بدولت ہم سب بہت سی باتوں پر اختلاف ہوتے ہوئے بھی نظرانداز کر دیتے ہیں اور یہی ایک ادراے کی کامیابی کا راز ہوتا ہے۔ جب تک آپ ایک دوسرے کو عزت نہیں دیں گے تب تک آپ کامیابی حاصل نہیں کر سکتے۔

یہ بھی پڑھئے:   نوجوان نسل کو یہ بھی سکھائیں

قلم کار کے دو سال مکمل ہونا ہم سبھی کے باہمی تعاون اور عزت و احترام کے رشتے کی وجہ سے ہے لہذا عزت کریں اور کروائیں منزل دور بھی ہوئی تو قریب آنے میں دیر نہیں لگے گی۔ آپ کہیں بھی کام کریں اگر آپ کو اپنے ہم مزاج لوگ مل جائیں تو بہت سی نئی چیزیں سکیھنے اور سمجھنے میں آسانی ہوتی ہے۔ کبھی کبھی یوں لگتا ہے ہم اس قافلے سے بچھڑے تھے اور پھر اچانک راہ چلتے اس بچھڑے قافلے سے آن ملتے ہیں قلم کار بھی میرے لئے ایک بچھڑا ہوئا قافلہ تھا جو راہ چلتے مل گیا اور اک نئی روشنی سے آگاہی ہوئی ایسی روشنی جس میں الفاظ کے ذریعے نئی امنگیں اور دیئے جلائے جاتے ہیں۔ جہاں ہمیشہ یہی کوشش کی جاتی ہے کہ نئے لکھنے والوں کو اول ترجیح دی جائے اور حوصلہ افزائی کی جائے۔

میری نئے لکھنے والوں اور خاص طور پر لڑکیوں سے گذارش ہے کہ اچھے اخلاق اور بہتر رہنمائی کے لیے قلم کار ٹیم کو ضرور جوائن کریں۔ آپ کو یہاں بہت سے ایسے لوگ ملیں گے جو لکھنے کے علاوہ بھی بہت سے فلاحی کام سر انجام دے رہے ہیں۔ کچھ عرصے تک قلمکار کا سہ ماہی ادبی جریدہ بھی آنے کا امکان روشن ہے جو منتخب تحریروں پر مبنی ہو گا۔ اس سب میں آپ سب لکھنے والوں اور ٹیم ممبرز کا ساتھ اور تعاون درکار ہے۔ ہم سب کی کوشش سے ہی یہ کام پایہ تکمیل کو پہنچ سکے گا۔ پروردگار عالم ہم سب کا حامی و ناصر ہو اعتماد اور اس بے لوث جذبے کی فضا یوں ہی قائم و دائم رہے۔

Views All Time
Views All Time
697
Views Today
Views Today
1

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: