Oops! It appears that you have disabled your Javascript. In order for you to see this page as it is meant to appear, we ask that you please re-enable your Javascript!

ساہیوال میڈیکل کالج کے پرنسپل کے خلاف ہراسگی کی درخواست مسترد

Print Friendly, PDF & Email
تبادلہ اور قوانین کی پاسداری نہ کرنے والی خواتین جھوٹی درخواستیں دینے لگ جاتی ہیں ۔ خاتون محتسب

ساہیوال (قلم کار نیوز ڈیسک)خاتون صوبائی محتسب نے پرنسپل ساہیوال میڈیکل کالج کے خلاف جنسی ہراسگی کی درخواست عدم ثبوت کی وجہ سے خارج کر دی،خاتون ملازمہ زہرہ بخاری نے ٹرانسفر کرنے پر خاتون محتسب کو جنسی ہراسگی کی درخواست دی تھی ،پرنسپل کا موقف-تفصیلات کے مطابق خاتون صوبائی محتسب رخسانہ گیلانی نے پرنسپل ساہیوال میڈیکل کالج پروفیسر ڈاکٹر محمد طارق کے خلاف نرسنگ سکول ساہیوال کی ملازمہ زہرہ بخاری زوجہ ناصر محمود بخاری کی جنسی ہراسگی کی درخواست عدم ثبوت کی بنیاد پر خارج کر دی جو مذکورہ ملازمہ نے ٹرانسفر کرنے پر پرنسپل کے خلاف22اکتوبر 2018کو دائر کی تھی –

اس سے پہلے مذکورہ ملازمہ نے پرنسپل کے فیصلے کے خلاف لاہور ہائی کورٹ ملتان بنچ میں رٹ دائر کی تھی جو ابتدائی سماعت میں ہی خارج کر دی گئی تھی -پرنسپل ڈاکٹر محمد طارق نے خاتون صوبائی محتسب کے فیصلے کو سچائی کی فتح قرار دیتے ہوئے کہا کہ انتظامی فیصلوں میں ملازمین کا الزامات لگا کر بلیک میل کرنا کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا اور ایسے عناصر کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی –

Views All Time
Views All Time
97
Views Today
Views Today
4
یہ بھی پڑھئے:   سعودی عرب: ایران کے لیے جاسوسی پر 15 افراد کو سزائے موت کا حکم

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: