Skip to Content

Qalamkar | قلم کار

جہالت، ظلم اور ناانصافی کے خلاف برسرپیکار

جو اماں ملے تو کہاں ملے

جو اماں ملے تو کہاں ملے
Print Friendly, PDF & Email

zari ashrafمبارک ہو شہادت نصیب ہوئیی ۔۔۔مرتے وقت کلمہ پڑھ رہا تھا ۔۔ دھماکہ کرنے والے مسلمان نہیں ہو سکتے ۔۔۔ہم بھر پور مذمت کرتے ہیں۔۔۔دشمن سے آہنی ہاتھوں سے نمٹیں گے ۔۔کوئی ہمارے ملک کو میلی آنکھ سے دیکھنے کی جرات نہیں کر سکتا ہے ۔۔ ارے وہ کوئی شہادت کی نیت سے نکلے تھا صبح تیار ہو کے وہ تو اپنے بچوں کی روزی روٹی کمانے نکلے تھے وہ معصوم جن کو ہنستے کھیلتے چھوڑ آئے تھے کیسے مرنے کی خبر سنی ہو گی ہم بڑوں پر کپکپی طاری ہو گئی صرف خبر سن کے تو ان بچوں کی کیا حالت ہوئیی ہوگی جب جوان باپ کی لاش گھر پہنچی ہوگی۔ کتنا دل کیا ہو گا کہ کاش ایک بار آنکھیں کھولیں بات کریں بس ایک بار آوز دیں۔۔۔ اس بیوہ کی کیا حالت ہوئی جس کا بھری جوانی میں سہآگ اجڑ گیا ابھی تو بہت سے وعدے وفا ہونا باقی تھے وہ قسمیں ایک دھماکے کی نظر ہو گئیں جو ساتھ جینے اور مرنے کی کھائی تھیں۔۔۔ان بوڑھے ماں باپ نے بیٹے کی لاش کیسے وصول کی ہو گی جن کی کمر پہلے ہی جھکی ہوئی ہے ۔۔۔ وہ جوان بہنوں کا مان کیا ہوا جس بھائی کے ساتھ دن رات گزر رہے تھے ۔۔۔ کیسے بےحس حکمران ہو تم شہید کہہ کے طفل تسلیاں دیتے ہو ۔۔کیا وہ شہادت کی نیت سے گھر سے گئے تھے یا محنت کرنے۔۔۔یہ بھی بھلا کوئی عمر ہے مرنے کی پچیس سے چالیس سال تو اپنی جوانی نبھانے اور سہانے خواب سجانے کی عمر اور تم چلے کفن پہنے اس دیس جہاں سے کوئی واپس نہیں آتا ۔۔۔جانے والے گئے پر جو پیچھے رہ گئے ان کا کیا بنے گا؟ کیسے کٹے گی ساری عمر جن کے بغیر ایک لمحہ بھی نہیں گزرتا تھا ۔۔۔ اللہ غارت کرے ایسے عہدےداروں کو جو ہمارا ملک لوٹ کے کھانا جانتے ہیں اور تحفظ دینا نہین جانتے ۔۔۔ان کے بچے باہر کے ملکوں میں محفوظ ہیں اور ہمارے بچے مفت کی شہادت وصولنے کے لیے رہ گئے ۔۔ کب تک کٹی پھٹی لاشیں اٹھاتے رہیں گے؟ کب تک جوانوں کو روتے رہیں گے؟؟؟میرے ملک کے بچے کے لیے کوئی محفوظ پناہ گاہ نہیں ہے۔۔بڑوں کی زندگیاں محفوظ نہیں ہیں۔۔جائیں تو کہاں جائیں ۔۔۔ بس بچتا ہے تو صبر آخر کتنا صبر کون سا صبر جو ختم ہونے میں ہی نہیں آ رہا ۔۔۔ کیا دلاسا دوں بچوں کو ماؤں کو بیواؤں کو بوڑھے باپوں کو جوان بھائیوں کو؟؟؟مجھ میں پرسہ دینے کی ہمت نہیں ہے ۔۔بس التجا ہے کہ اب گھٹ گھٹ کے نہیں مرا جاتا ایک۔ہی بار کیوں نہیں مار دیتے ہو؟؟؟

Views All Time
Views All Time
1089
Views Today
Views Today
1
Previous
Next

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

%d bloggers like this: