Skip to Content

Qalamkar | قلم کار

جہالت، ظلم اور ناانصافی کے خلاف برسرپیکار

ہمیں جیتنا ہے

by جولائی 3, 2016 بلاگ
ہمیں جیتنا ہے
Print Friendly, PDF & Email

laiba zainabعام مشاہدے کی بات ہے کہ آپ جب بھی کوئی نیا کام کرنا شروع کرتے ہیں تو ابتداء میں جہاں ہمت بڑھانے والے کئی لوگ آپ کے ساتھ ہوتے ہیں وہیں تنقید کرنے والوں کی بھی کمی نہیں ہوتی۔صرف دو چار لوگوں کو ہی تنقید برائے اصلاح کرنی آتی ہے ورنہ اکثر و بیشتر کا وتیرہ تنقید برائے تنقید ہی ہوتا ہے۔میں نے جب رپورٹنگ کی فیلڈ میں قدم رکھا اور کچھ مختلف کر کے دکھانے کا سوچا تو جہاں پزیرائی ملی وہیں بہت سے لوگوں نے مجھے یہ احساس دلانے کی بھی کوشش کی کہ میں ایک لڑکی ہوں اور مجھے لڑکیوں کی طرح ہی رپورٹنگ کرنی چاہیئے۔یقین کیجیئے چار سال ماس کام کی پڑھائی کے دوران کسی بھی جگہ یہ نہیں پڑھا تھا کہ ایک لڑکی اور لڑکے کی رپورٹنگ میں فرق ہوتا ہےہمیشہ یہی پڑھا کہ رپورٹر کا کام رپورٹنگ کرنا ہے تبھی شاید سمجھ نہیں سکی کہ کیا کہا جا رہا ہے یا شاید سمجھنا چاہا ہی نہیں کہ جب کام کرنا ہی ہے تو پھر ڈھنگ سے کریں جنسی تفریق کا کام میں بھلا کیا کام…
ایک ماہ قبل پروڈکشن کی فیلڈ میں کام کرنے کا موقع ملاچونکہ شروع ہی سے پروڈکشن میں جانے کاارادہ تھا تو ایک لمحہ ضائع کیئے بغیر کام شروع کر دیا۔اس ایک ماہ میں جو سب سے اہم چیز سیکھی وہ صبر اور برداشت سے بھی زیادہ لوگوں کے بدلتے رویوں سے دلبرداشتہ نا ہونا ہے۔مجھے دُکھ ضرور ہوا کہ جنہیں میں اپنا دوست یا کم از کم خیر خواہ سمجھتی تھی وہ صرف کھوکھلے دعوے کرنے والے انسان تھے۔جن سے امید کی جا سکتی تھی کہ وہ مشکل وقت میں ساتھ دیں گے اُنہوں نے ہی اُس وقت ٹانگیں کھینچیں جب دم گُھٹنے کا ڈر تھا۔دل بھی ٹوٹا،آنکھیں بھی نم ہوئیں اور کہیں حوصلے بھی پست ہوئے۔کچھ لمحوں میں تو سب کچھ چھوڑ کر بھاگ جانے کو بھی دل کیا مگر پھر ایسے مہربان دوستوں نے ساتھ دیا جن کے بغیر شاید یہ کامیابی ممکن ہی نہیں تھی۔اس سارے سفر میں میرے گھر والوں نے جس محبت اور اعتماد کا اظہار کیا اُسکا کوئی نعم البدل نہیں۔
ایک اہم بات جو مجھے لگتا ہے کہ کسی بھی فیلڈ میں کام کرنے والے لوگوں کو یاد رکھنی چاہیئے وہ یہ ہے کہ سینئر،جونیئر یا کولیگ کی صورت میں ایسے لوگ ہمیشہ ملیں گے جو نا صرف دل بلکہ زبان کے بھی گندے ہوں گے۔انکو جواب دے کر اپنی زبان گندی کرنے اور سوچ سوچ کر خون جلانے سے بہتر ہے کہ آگے بڑھتے جائیں اور اپنی کامیابی کے ذریعے اُنہیں منہ توڑ جواب دیں۔وہ تمام لوگ جو یہ سوچتے تھے کہ لائبہ زینب بھاگ جائے گی یا انکی گھٹیا باتوں اور حرکتوں کی وجہ سے گھبرا جائے گی اُنہیں میں بس اتنا ہی کہوں گی کہ ایک لڑکی ہوں اور ہرگز کمزور نہیں ہوں۔ہر بات کا جواب اپنے کام سے دوں گی کیونکہ ابھی تو اس سفر کا آغاز ہوا ہے،ہم لڑکیوں کو بہت دور تک جانا ہے نا صرف اپنے لیئے بلکہ اُن لڑکیوں کے لیئے بھی
جنہیں زندہ رہنا ہے
اپنے خواب پورے کرنے ہیں
اور ہر مشکل کا سامنا کرتے ہوئے
ہمیں جیتنا ہے

Views All Time
Views All Time
621
Views Today
Views Today
1
یہ بھی پڑھئے:   ڈونلڈ ٹرمپ کا پاگل پن کیا رنگ دکھانے کو ہے؟
Previous
Next

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

%d bloggers like this: