جہنم کی سیر

Print Friendly, PDF & Email

jerryابھی سویا ہی تھا کہ دو فرشتے آئے اور گریبان سے اُٹھا کے چل پڑے، چھوڑو مجھے،،، کہاں لے کے جا رہے ہو؟ میں نے پوچھا۔۔۔۔ تمہیں تمہارے کرتوتوں کے ثمرات دینے لے جارہے ہیں۔ یہ کہہ کر ایک فرشتہ دوسرے کو دیکھ کے طنزیہ مسکرانے لگا۔ دوسرا فرشتہ مجھے دیکھ دیکھ کے ایسے گھوُر رہا جیسے طاہر شاہ نے نہیں میں نے اُس کے نام کا ناجائز استعمال کیا ہو،، میں گھبرایا، ہمت کر کے پوچھا بھائی کیا ہوا؟ مجھ سے کوئی غلطی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔!!!! ابھی جملہ مکمل بھی نہ ہوا تھا کہ فرشتہ گرجدار آواز میں بولا غلطی؟؟؟؟ میں تمہارا بائیں ہاتھ والا فرشتہ ہوں، تمہارے کارنامے لکھ لکھ کے 69 رجسٹر بھر چُکا ہوں،رجسٹر میں تمہارا نام کم میاں خلیفہ کا نام زیادہ ہے،، اپنے گناہوں کا سوچ کے میں تھوڑا گھبرایا،پھر میں نے سوچا نیک اعمال بچا لیں گے، اسی اُمید پہ میں نے دوسرے فرشتے سے اپنے نیک اعمال کا حساب مانگا تو اُس نے کچھ صفحات پہ مشتمل دستاویز میرے سُپرد کردی، میں نے پوچھا "بس؟؟؟ صرف یہ؟؟ ،، فرشتہ مسکراتے ہوئے بولا ” اس میں زیادہ تر وہ ہیں جو تمہارے گھر والوں نے تمہیں فاتحہ کے بعد بخشوائے ہیں۔ سخت پریشان تھا کہ سامنے بابِ بہشت آگیا اور مجھے اندر جانے کو کہا، میں دل ہی دل میں مسُکرایا اور کہا "تنائج میں ردو بدل ہر جگہ ممکن ہے”۔ خیر، دودھ کی نہریں، سبز باغات، من و سلوی سب نظر آیا لیکن وہ حوریں بالکل نظر نہیں آئیں جن کا ذکر مولانا طارق جمیل سے ایک ویڈیو میں سُن رکھا تھا، خیر، ابھی کچھ دیر ہی گُزری تھی کہ اعلان ہوا دوزخ جانے والی گاڑی تیار کھڑی ہے جیری رضا جہاں بھی ہوں بابِ بہشت پہ آجائیں، اپنا نام سُن کے گھبرایا، اس سے پہلے کچھ سوچتا سامنے سے فرشتہ ہاتھ پہ کوڑا لئے آیا اور بولا قانون کے مطابق جتنے تم نے نیک اعمال کئے ہیں اُن کی جزا صرف اتنی ہی بنتی تھی، منہ لٹکائے گاڑی میں بیٹھا اور پہنچا دوزخ، یہاں مجھے گاڑی سے اُترنے کا کہا نہیں گیا بلکہ گھسیٹتے ہوئے اُتارا گیا، دوزخ پہنچا تو بہت سے عزیز و اقارب سے ملاقات ہوئی، تقریباََ سب نے ویلکم کہا، تھوڑا آگے ہی گیا تھا کہ ایک ہلچل مچی ہوئی تھی، دریافت کرنے پہ معلوم ہوا پاکستان میں کسی نے فرشتوں کے نام کا غلط استعمال کیا ہے جس پہ تمام فرشتے غیض میں ہیں اور سارا غصہ دوزخ میں رہائیش پزیر پاکستانی لوگوں پہ نکالا جا رہا ہے۔ پاکستانی ہونے کی باعث میں نے وہاں سے فرار ہونے میں ہی اپنی عافیت جانی۔۔! قابلِ زکر بات ہے کہ مردوں کے لئے جہنم کی سزاؤں میں ایک سزا یہ بھی ہے کہ انہیں مرنے کے بعد بھی بیویوں کے ساتھ ہی رکھا جاتا ہے۔ عورتوں کو جلانے کے لئے انہیں زنجیروں سے باندھ کر آگ کی جگہ لان پہ 40% ڈسکاؤنٹ آفر کے اعلانات کئے جاتے ہیں۔ کچھ دور گیا تو فرعون سے ملاقات ہوئی ملاقات میں اُس نے اپنے اور قائم علی شاہ کی دوستی کی تصدیق کی۔ خیر، آگے بڑھنے لگا تو ایک فرشتہ نے دور سے عربی میں مجھ سے کہا، مجھے لگا وہ تلاوت کررہا ہے اس لئے میں آگے بڑھنے لگا، ابھی آگے چلنا شروع ہی ہوا تھا کہ فرشتہ نے جلال میں آ کے دور سے ہی ایک پتھر اُٹھا کے میرے سر پہ دے مارا اور میں زمیں پہ جا گِرا،،، اُٹھا توخود کو اکنامکس کی کلاس میں پایا۔

Views All Time
Views All Time
482
Views Today
Views Today
1
یہ بھی پڑھئے:   اُس کھیت میں بھنگ گھوٹ کے تم اور مِلا دو - ڈاکٹر صلاح الدین حیدر

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: