Skip to Content

Qalamkar | قلم کار

جہالت، ظلم اور ناانصافی کے خلاف برسرپیکار

بہنوں کی اقسام – پہلی قسط

by جولائی 14, 2016 مزاح
بہنوں کی اقسام – پہلی قسط
Print Friendly, PDF & Email

tanveer ahmedکولیگز بہنیں
بہنوں کی یہ قسم ہر ورکنگ انوائرمنٹ میں پائی جاتی ہے. ان میں خوبصورتی کا تناسب اتنا ہی ہوتاہے جتنا پاکستان کرکٹ ٹیم کا ورلڈکپ میں انڈیا کے خلاف جیت کا ہے یا جتنا نواز شریف میں ایمانداری کا، ممنون حسین میں بولنے کا، شیخ رشید کے حلالی بچوں کا اور عمران خان میں برداشت کا ہے۔ یہ ہر اس لڑکے کو بھائی بولتی ہیں جو ان کو کم پیسے کمانے والا لگتا ہے اور ان کو ہر وہ شخص کم پیسے کمانے والا لگتا ہے جو ان سے نہیں دوسری لڑکی کے ساتھ ساتھ لگتا ہے.. کولیگز بہنیں کئی قسم کی ہوتی ہیں ایک وہ جو آپ کی پہنچ سے دور ہوتی ہیں اور دوسری وہ جو باس کی پہنچ میں ہوتی ہیں اور شاید یہی وجہ ہوتی ہے کہ باس تمام ورکرز کے ساتھ بہنوئی والا برتاؤ کرتا ہے. اگر آفس میں کوئی لڑکی آپ کو بھائی نہیں کہہ رہی تو یہ مان لیں کہ وہ آپ سے چھوٹے عہدے پر فائز ہے یا اسے ترقی کرنے کا بہت شوق ہے اور آپ کے رحم و کرم پر ہے. یہ بہنیں اپنے کام میں اس وقت تک دلچسپی لیتی ہیں جب تک کم ازکم مینجر ان میں دلچسپی نہیں لیتا اور جیسے ہی کوئی آفیسر ان میں دلچسپی لیتا ہے تو یہ بڑے عہدے کے ساتھ ساتھ برانڈز میں بھی دلچسپی لینا شروع کر دیتی ہیں.
نوٹ شئیر کرنے سے پہلے چیک کر لیں کہ باس یا بہن ایڈ نہ ہو ورنہ فاقہ کشی کا راقم الحروف ذمہ دار نہ ہو گا.
فیس بکی بہنیں
فیس بکی بہنیں زیادہ تر گروپس اور شعر و شاعری والے پیجز پر پائی جاتی ہیں باقی بچی کچھی ہر اس پوسٹ پر پائی جاتی ہیں جہاں لڑکیوں کے خلاف ڈسکشن ہو رہی ہو اور صرف ایک لڑکا دوسرے لڑکوں کو غیرت دلانے کوشش کر رہا ہو اور وہی ان کا ٹارگٹ یا یوں کہہ لیں بھائی ہوتا ہے. ایسی لڑکیوں کے پاس بھائی بنانے کے بہت سے جواز ہوتے ہیں جیسے کہ 1 "میں اپنے بوائے فرینڈ سے کچھ نہیں چھپاتی اس لئے اگر تعلق رکھنا ہی ہے تو بھائی بن سکتے ہو” وہ علیحدہ بات ہے کہ تحقیق کے بعد موجودہ بوائے فرینڈ سابقہ بھائی نکلتا ہے 2 "ہم چار بہنیں ہیں میرا کوئی بھائی نہیں تم بن جاؤ "لڑکا باقی تین کے چکر میں بھائی بن جاتا ہے مگر اس بات سے بے خبر کہ ان کو بھی بھائی کی ضرورت ہو گی,, وغیرہ فیس بکی بہنوں اور بھائیوں میں بس جنس کا فرق ہوتا ہے بلکہ اکثر”کیسز میں یہ بھی نہیں رہتا. ایسی لڑکیاں اصول کی اتنی پکی ہوتی ہیں کہ شوہر بھی فیسبک پر آ جائے تو اسے بھی "جی شوہر بھائی” کہہ کر بلاتی ہیں بلکہ حقیقی زندگی میں ایسی لڑکیاں ہی فرنٹ پر بیٹھ کر لگاڑیوں کے حادثے کا سبب بنتی ہیں. میرے ایک دوست نتھا سنگھ قصوری کا کہنا ہے ایسی لڑکی کو پھنسانے سے بہتر ہے کہ بندہ اپنا ہی فی میل اکاؤنٹ بنا کر خود کو ہی پھنسا لے. میرے ایک بزرگ دوست جلیل چشتی صاحب کا کہنا ہے کہ "جس طرح زندگی کی راہ میں رکاوٹیں آتی ہیں اسی طرح فیس بک پر بہنیں آتی ہیں لہذا گھبرانا نہیں چاہے بلکہ مقابلہ کرنا چاہیے. فیس بکی بہنیں اکثر سر کٹی، پیر کٹی،ہاتھ کٹی اور کہیں کہیں ناک کٹی بھی ہوتی ہیں یہ بہنیں فیس بک پر دوسروں کی بہنیں بھائی کے ساتھ پھنسانے کا بھی کام کرتی ہیں بدلے میں کچھ نہیں چاہتیں البتہ بھائی چلتے گروپ کا ایڈمن بنا دے تو یہ اس کا بڑا پن ہے. فیس بکی بہنوں کے ساتھ سب سے زیادہ مسئلہ آئی ڈی ہیک ہونے کا بنتا ہے ۔ پرائیویسی لگوانا، آئی ڈی ریکور کرنا اور بھائی بننے سے انکار کرنے والے لڑکے کی آئی ڈی رپورٹ کروانا جیسے کام یہ فیس بکی بھائیوں سے ہی لیتی ہیں. جب سے آن لائن بلاگز کا سلسلہ شروع ہوا ہے بہنوں کی تعداد میں کمی اور عاشقوں کی تعداد میں اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے میری ایک رائٹر فیس بکی دوست کا ایک آن لائن بلاگ کے بارے میں کہنا ہے کہ ان کا بس چلے تو ہم سب کو امید سے کر دیں
نوٹ: کسی بھی قسم کی مماثلت محض اتفاقیہ ہوگی
جاری ہے…

Views All Time
Views All Time
1500
Views Today
Views Today
1
یہ بھی پڑھئے:   مولوی | ذیشان حیدر نقوی
Previous
Next

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

%d bloggers like this: