جوگی بابا نے ایک نعرۂ مستانہ لگایا اور لال لال آنکھوں سے مجھے گھورتے ہوئے بولے: ” تمہاری کیا خواہش ہے بچہ؟ میں نے ہاتھ باندھ کر عرض کی۔ جوگی Continue Reading »