صحراوٗں میں رہا ،دربار سے بازار تک سفر کیا۔ در ،دریچہ ،مسجد ،مندر ،راہ دار سے مزار تک ،ایوان سے میدان تک ،کبھی ساہوکار کے مول پہ تو کبھی گداگر Continue Reading »