اے دختر مشرق تیرے خون کی ارزانی نہیں دیکھی جاتی، تو پہلے بھی مصلوب تھی اب بھی معتوب ہے، ایسے ایسے جرائم میں تیرے سانس کی ڈور کھینچ لی جاتی Continue Reading »