Oops! It appears that you have disabled your Javascript. In order for you to see this page as it is meant to appear, we ask that you please re-enable your Javascript!

لمحۂ فکریہ

Print Friendly, PDF & Email

پیارے خواب غفلت کا شکار پاکستانی

تسلیم وآداب

خیریت ہی ہوگی چہار جانب جو آپ چین کی بنسی بجا رہے ہیں۔ وہ جو کہتے ہیں انگریزی میں ” no news good news ” ۔نہار منہ خبریں طبیعت بوجھل کردیتی تھیں اس لیے اخبار کا داخلہ بند کرادیا آپ نے۔ شام ڈھلے تھکے ماندے میلوں کا سفر طے کرکے گھر، پیارے گھر پہنچنے پر کون ذہن کو مزید تکلیف دہ خبروں سے پراگندہ کرے سو ملکی خبروں کے بجائے کئی سو چینلز میں سے تروتازہ اور سندر چہرے دیکھ کر دل و نظر کی آسودگی حاصل کرلیتے ہیں۔ یہ تو سب ٹھیک لیکن کبھی کبھار اپنے آس پاس کیا ہورہا ہے اس کی خبر بھی رکھ لی جاےء تو کچھ ہرج نہیں۔

آج کی تازہ خبر بے حد افسوس ناک اور تکلیف دہ، اگر آپ سننے کی زحمت فرمائیں۔ کراچی میں اپنے جائز حقوق کا مطالبہ کرنے والے اساتذہ کی سڑکوں پر تذلیل کی گئی، زدوکوب کیا گیا، سر عام مولا بخش کا ان پر بے دریغ استعمال کیا گیا اور اسی پر بس نہیں، گھسیٹتے دھکیلتے اور مارتے ہوئے گرفتار کرلیا گیا۔

آج کیا تماشہ بازی کی گئی ہے۔ کون پوچھ سکتا ہے صاحبان اقتدار سے؟ کیا کوئی اور طریقہ کار نہیں احتجاج کرنے والوں کو منتشر کرنے کا؟ بلکہ اس سے بھی پہلے یہ سوال اٹھتا ہے کہ معاملات کو اس حد تک کیوں پہنچایا گیا؟ استاد کی عزت گھٹی میں ڈالی گئی ہے اسے کیوں بھلا دیا گیا؟ پیارے پاکستانی سوئے رہیے لمبی تان کر ۔ ۔ ۔ بس اس دن تک کے لیے جب یہ آگ آپ کے گھر تک نہی پہنچتی۔

یہ بھی پڑھئے:   انا کے مقابل | یاسر حمید - قلم کار

بہت دعا
شب بخیر اور خدا ہی حافظ۔

Views All Time
Views All Time
300
Views Today
Views Today
1

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: