Skip to Content

Qalamkar | قلم کار

جہالت، ظلم اور ناانصافی کے خلاف برسرپیکار

روداد سالگرہ کی-ساجدہ سلطانہ

by فروری 18, 2017 صفحہ اول, مزاح
روداد سالگرہ کی-ساجدہ سلطانہ
Print Friendly, PDF & Email

السلام علیکم
فجر سے کچھ پہلے کا وقت ہے ہماری سالگرہ شروع ہوئے پانچ گھنٹے ہوگئے اور سارا گھر ہے کہ سویا پڑا ہے ، کسی کو ہماری پروا ہی نہیں ہے حد ہوتی ہے ، یہ جو ہمارے گھر والے اور خصوصاً گھر والا ہے ناں یہ تو بالکل ہی بدذوق لوگ ہیں سچ پوچھو تو ان سے زیادہ خیال تو ہمارے فیس بکی دوست رکھتے ہیں ، ابھی یہی دیکھ لیں کہ کل ہم نے صرف اپنی ڈی پی ہی تبدیل کی تھی اور یہ لکھا تھا کہ ہمیں سالگرہ کی مبارکباد دیں ، اللہ جھوٹ نہ بلوائے پچاسوں تو کیک ہی آگئے دعاؤں اور میسجز کا انبار الگ لگ گیا ، سچ ہم تو ان ان محبتوں کے قرضدار ہی ہو گئے ہیں ، مارے جذبات کے ہماری آنکھوں میں آنسو آگئے بڑی مشکل سے انکو واپس دھکیلا,( ارے بھئی لینس نکل جاتے ہیں ناں رونے سے )
تو خیر ایک دن پہلے سے ہی ہم نے تحفے بٹورنے اور کیک کھانے شروع کردئے ویسے اتنے کیک کھا کے بھی عجیب بات یہ ہوئی کہ نہ پیٹ بھرا نہ شوگر بڑھی ،، ( کاغذی کیک تھے ناں ) ایک بات ہمیں تو لگتا ہے کہ ہمارے گھر والے ہم سے کچھ کچھ جلتے بھی ہیں اب دیکھیں سنا ہے کہ مغرب میں سالگرہ والے دن سونے ، کھانے ، پینے ،ناچنے گانے غرض ہر کام کی آزادی ہوتی ہے کوئی کچھ کرے لوگ کہتے ہیں کرنے دو آج تو اس کی سالگرہ ہے ( اندر کی بات ہے ہم نے تو یہاں تک سنا ہے کہ صدر ٹرمپ بھی الیکشن ہارنے لگے تھے مگر کیوں کہ اس دن ان کی سالگرہ تھی تو سب بولے چلو چھوڑو اس کو جتا دو آج تو اس کا برتھ ڈے ہے ) اب آگر ہم نے بھی اپنی کچھ ادھوری تمنائیں پورا کرنے کا سوچ لیا تو بھلا کیا برا کیا ، بچپن سے ہم کو گھوڑا چلانے کا، کرکٹ کھیلنے کا، میک کرنے ، سینیما میں پکچر دیکھنے کا اور سب سے بڑھ کے گلوکاری کا شوق تھا، اب کیوں کہ آج ہماری سالگرہ ہے اور ہم کچھ ایسا کرنے لگے ہیں تو اس میں کیا حرج ؟؟
کل ہماری بیٹی فری ہمارے لیے ایک خوبصورت سا سوٹ لے کے آئی، ہم بہت خوش ہوئے ویسے اوپر اوپر سے ہم نے کہا کہ بیٹا کیا ضرورت تھی اس تکلف کی ہم تو پرانے کپڑوں میں بھی بہت اچھے لگتے ہیں ،ہمارا معاملہ تم سے بالکل الگ ہے ،،،، مگر وہ کہنے لگی کہ نہیں امی ، آپکے پاس کپڑے ہیں ہی کہاں ، اور جو ہیں وہ بالکل آپ ہی کے جیسے ہیں ، ? بس آپکو یہ سوٹ سالگرہ پہ ضرور پہننا ہوگا۔ سچی بات اب آپ سے کیا چھپانا آپ تو ہمارے اپنے ہیں اس نے تو یونہی سا کہا تھا مگر ہمارا اپنا دل کر رہا تھا نیا سوٹ پہنے کا لہذا ہم صبح ہی ٹیلر کے پاس پہنچے اور ارجنٹ سوٹ سلوالیا،سارا دن سوٹ دیکھ دیکھ کے خوش ہوتے رہے ،،، شام کو گل محترمہ سے بات ہوئی تو انکو بھی کیمرے کی آنکھ سے دکھایا اور یونہی مشورہ لیا کہ کیا خیال ہے آگر سوٹ کے میچنگ کی ہائی ہیل کی سینڈل ، چوڑیاں اور جیولری بھی لے لیں اور محلے کے پالر سے مہندی بھی لگوالیں ، بس اتنی سی بات پہ گل صاحبہ آپے سے باہر ہی ہوگئیں ، اپنی بڑی بڑی آنکھیں پھاڑ کے ہمیں گھورا اور بولیں ” امی آپکی سالگرہ ہے شادی نہیں” اور اب آپکی عمر نہیں ہے اتنا سجنے سنورنے کی ، بس منہ دھو کے یہ کپڑے پہن لیجئے گا یا زیادہ سے زیادہ نہا لیجئے گا ? ،،،، دیکھیں ذرا ، صاف صاف جلاپا نظر آتا ہے کہ نہیں؟؟؟
اچھا اب چھوٹی شہزادی کا سنیں ہم نے انکو بھی سوٹ دکھایا ” دیکھو فری کتنا اچھا سلا ہے ناں ؟ کتنا پیارا لگ رہا ہے ، کل جب تم لائیں جب تو اتنا خاص نہیں لگ رہا تھا ،،،،، ہم آنکھوں میں شوق لئے سوٹ پہ پیار سے ہاتھ پھیرتے ہوئے گویا ہوئے،،،
” اففففففففففف فری کی آنکھیں سر پہ چڑھ گئیں ، امی یہ کیا کردیا آپ نے ، یہ پیلے سوٹ پہ لال رنگ کی لیس ،اور موتی بھی ، اللہ اور یہ کیا ہے شیشے والے بٹن بھی ؟ آپکو پتہ بھی ہے لالہ زار کا اوریجنل سوٹ تھا یہ ، اس پہ یہ سب کرنے کی کیا تک تھی ،اب یہ کیسے پہنیں گی آپ ؟ آپ کو بالکل سینس نہیں ہے کہ اس عمر میں کیسے کپڑے پہنتے ہیں ، اب یہ آپکے پہنے کے قابل نہیں رہا ، آپ واپس جائیں ٹیلر سے میرے ناپ کی فٹنگ کرادیں ، آپکو میں اتوار بازار سے دوسرا سستا والا لا دوں گی، ” ،،،،، ???
ہم آنکھوں میں آئے آنسو دھکیلنے لگے ( لینس گر جاتے ہیں ناں) ،
ازطرف، غمزدہ و دکھیاری
ڈاکٹرنی جی

Views All Time
Views All Time
648
Views Today
Views Today
1
یہ بھی پڑھئے:   ہاسٹل میں پڑنا- پطرس بخاری
Previous
Next

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

%d bloggers like this: