داعش اور القاعدہ کو امریکہ کی مالی معاونت حاصل ،پاکستان میں داعش تھی ،ہے اور رہے گی :رحمان ملک

Print Friendly, PDF & Email

سابق وفاقی وزیرداخلہ رحمان ملک نے کہا ہے کہ داعش اور القاعدہ کو امریکہ اور اس کی ایجنسی سی آئی اے کی مالی معانت حاصل ہے جبکہ پاکستان میں داعش تھی ،ہے اور مستقبل میں بھی رہے گی۔

جیو نیوز کے پروگرام ”جرگہ “ میں گفتگو کرتے ہوئے رحمان ملک کا کہنا تھا کہ افغان صدر اشرف غنی اس وقت بھارت کیلئے کام کررہے ہیں اور پاکستان کیخلاف کارروائیاں کی جارہی ہیں۔دنیا کی 90فیصد افیون افغانستان میں موجود ہے اور وہاں کی حکومت اس افیون کے ذریعے آنیوالی کمائی کا پیسہ طالبان سے کیساتھ بانٹ لیتی ہے اور اس پیسے کو بعد میں ہمارے ملک میں انارکی پھیلانے کیلئے استعمال کیا جا تا ہے۔انہوں نے کہا کہ داعش پاکستان کیلئے سب سے بڑا خطرہ ہے اور اگر دیکھا جائے تو اس کے تانے بانے امریکہ سے جا کر ملتے ہیں اور میرے نظریے کے مطابق داعش پہلے بھی ہمارے ملک میں تھی آج بھی اور جب تک اس کیخلاف موثر کارروائی نہ کی گئی تو اس کا وجود مستقبل میں بھی رہے گا۔
رحمان ملک کا کہنا تھا کہ پنجاب طالبان کی جڑ ہے جبکہ لشکر جھنگوی کی بھی جڑ پنجاب ہی تھاکیونکہ ماضی میں جتنے بھی بڑے واقعات رو نما ہوئے ہیں ان میں لشکر جھنگوی کا نام ہر صورت میں سامنے آیا ہے ۔ طالبان نے میرے سرکی قیمت ایک بلین ڈالر رکھی ہوئی جسے حاصل کرنے کیلئے وہ آج بھی کوشاں ہیں لیکن وہ ایسا کرنے میں کبھی کامیاب نہیں ہوپائیں گے۔میں نے اپنی سکیورٹی سے متعلق کبھی کسی کو نہیں بتایا، میں ماضی میں بھی اور آج بھی جب کسی جگہ نکلتا ہوں تو کسی کونہیں بتاتا۔ میں  اپناآنے اور جانے کاروٹ اپنے ذہن تک محدود رکھتا ہوں جبکہ  موت تو برحق ہے جس دن آنی وہ اس د ن اسے کوئی بھی نہیں روک سکتا۔

Views All Time
Views All Time
243
Views Today
Views Today
2
یہ بھی پڑھئے:   نسلِ انسانی اور تہذیب کا آغاز-جاوید سرور

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: