Skip to Content

Qalamkar | قلم کار

جہالت، ظلم اور ناانصافی کے خلاف برسرپیکار

اپنی ہستی کا اگر حسن نمایاں ہو جائے

by جولائی 7, 2018 شاعری
اپنی ہستی کا اگر حسن نمایاں ہو جائے
Print Friendly, PDF & Email

اپنی ہستی کا اگر حسن نمایاں ہو جائے

آدمی کثرت انوار سے حیراں ہو جائے

تم جو چاہو تو مرے درد کا درماں ہو جائے

ورنہ مشکل ہے کہ مشکل مری آساں ہو جائے

او نمک پاش تجھے اپنی ملاحت کی قسم

بات تو جب ہے کہ ہر زخم نمک داں ہو جائے

دینے والے تجھے دینا ہے تو اتنا دے دے

کہ مجھے شکوۂ کوتاہی  داماں ہو جائے

اس سیہ بخت کی راتیں بھی کوئی راتیں ہیں

خواب راحت بھی جسے خواب پریشاں ہو جائے

سینۂ شبلی و منصور تو پھونکا تو نے

اس طرف بھی کرم اے جنبش داماں ہو جائے

آخری سانس بنے زمزمۂ ہو اپنا

ساز مضراب فنا تار رگ جاں ہو جائے

تو جو اسرار حقیقت کہیں ظاہر کر دے

ابھی بیدمؔ رسن و دار کا ساماں ہو جائے.   شاعر بیدم شاہ وارثی، انتخاب عظمیٰ حسینی

Views All Time
Views All Time
67
Views Today
Views Today
2
یہ بھی پڑھئے:   اس راہِ شوق میں میرے ناتجربہ ِشناس
Previous
Next

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

%d bloggers like this: