سحر اور زینب کی باتیں

Print Friendly, PDF & Email

سحر: زینب میری سہیلی تم بھی میرے پاس آ گئی ہو؟ مگر تم کیوں آئی ہو؟ امی ابو سے ناراض ہو کر یا پھر بھیا اور باجی سے جھگڑا کر کے آئی ہو؟ کیا ہوا سہیلی کیوں آئی ہو مجھے بتاتی کیوں نہیں؟؟ زینب میری سہیلی میں پوچھنا یہ چاہتی ہوں تم نے میری امی کو کہیں دیکھا آتے ہوئے عرصہ ہوا امی جی کو دیکھے ہوئے

اور ابو ہاں ابو سے تو میں ناراض ہی ہوں جب سے آئی ہوں یہاں پلٹ کر نہیں آئے میری طرف، روز اسکول آتے تھے مجھے لینے کے لیے مگر نجانے یہاں کیوں اب تک مجھے لینے نہیں آئے۔ زینب میری سہیلی میرے بھیا اور باجی بھی شاید مجھ سے ناراض ہیں میں ان کو بہت تنگ کرتی تھی ان سے بہت لڑتی تھی شاید اسی لیے مجھ سے ناراض ہیں مجھے یاد بھی نہیں کرتے مگر میں انہیں ہر روز یاد کرتی ہوں اور دیر تک روتی رہتی ہوں۔

زینب میری سہیلی نجانے ایک دن کیا ہوا کسی انکل کے کہنے پر ان کے ساتھ گئی اور آج تک گھر واپس نہیں لوٹی شاید سب مجھ سے ناراض ہیں مجھے کوئی پسند نہیں کرتا۔ "میں گھر کی سب سے چھوٹی مگر سب سے بڑی بیٹی ہوں”۔

زینب بولی: سحر میری سہیلی تم رو مت میں آگئی ہوں نا اب تمہارے پاس دونوں مل کر خوب باتیں کریں گے مگر سحر میرا دل بھی بیٹھا جا رہا ہے وہ اس لیے کہ مجھے بھی یہاں آئے ہوئے کئی دن ہو گئے ہیں مگر کسی نے پلٹ کر نہیں دیکھا ماں کی بہت یاد آتی ہے نجانے وہ اپنی اس لاڈلی گڑیا کو یاد کرتی بھی ہو گی یا نہیں؟ ایک دن امی ابو ایک ساتھ گھر سے نکلے اور مجھ زینب کو اپنی لاڈلی کو گھر میں اکیلا چھوڑ گئے شاید پیار نہیں کرتے تھے مجھ سے میں بھی اب ان سے بہت دور آگئی ہوں ناراض ہوں ان سے کبھی بات نہیں کروں گی۔

سحر میری سہیلی میں بھی کسی انکل ہی کی وجہ سے یہاں تمہارے پاس ہوں۔ آؤ دونوں مل کر خوب روئیں اتنا روئیں اتنا روئیں کہ امی ابو بھائی بہن اور ان تمام بے ضمیر، بےحس، درندہ صفت لوگوں تک ہمارے رونے کی آواز پہنچ جائے۔ سحر: زینب میری سہیلی میں عرصہ دراز سے انصاف کی منتظر ہوں راہ تک رہی ہوں کہ کوئی آئے اور میرے خون ناحق کا بدلہ لے۔ ہم دونوں کو انصاف چاہئیے مگر کب اور کیسے؟ انصاف ہوتا ہے یہ دیکھنے کے لیے آنکھیں ترس گئی ہیں۔

(سحر زیادتی قتل کیس 2014 کوئٹہ پاکستان
زینب زیادتی قتل کیس 2018 قصور پاکستان)

Views All Time
Views All Time
233
Views Today
Views Today
1
یہ بھی پڑھئے:   کچھ باتیں جو آنکھیں کھولنے کے لئے ضروری ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: