تم جیو ہزاروں سال

Print Friendly, PDF & Email
میں اکیلا ہی چلا تھا جانب منزل مگر
 لوگ ساتھ آتے گئے، کارواں بنتا گیا۔
 ایک نئی سوچ، ایک نئی امنگ اور ایک نئے ولولے کے ساتھ آغاز کرنے والی ویب سائیٹ ” قلم کار” کے قیام کو دو سال مکمل ہوئے۔ سب سے پہلے تو خوشی کے اس موقع پر "قلم کار” کو میری طرف سے۔
              ”  ہیپی برتھ ڈے ٹو یو”
              تم جیو ہزاروں سال
                یہ میری ہے آرزو۔۔۔
           ”    ہیپی برتھ ڈے ٹو یو”
کہتے  ہیں ترقی کے لیے وسائل کے ساتھ ساتھ عزم صمیم کا ہونا انتہائی ناگزیر ہے ۔محنت، کوشیش اور لگن سے کامیابیاں خود منزل بن کر سامنے آجاتی ہیں ۔
حفیظ جالندھری کا ایک شعر ہے کہ۔۔
 اہل زباں کہاں مانتے تھے حفیظ
 بڑے زوروں سے منوایا گیا ہوں. ایسا لگتا ہے کہ یہ شعر قلم کار پر صادق آتا ہے . اس ویب سائیٹ نے محدود عرصے و محدود وسائل میں اپنی زندگی کے دو کامیاب سال مکمل کئے اور بہت کم عرصے میں اپنے آپ کو منوا لیا ۔
” قلم کار ” مجھے یوں عزیز ہے کہ اس نے مجھ جیسی طفل مکتب کو باوجود میری کم علمی، میری نا پختگی کے میری تحاریر کو سند قبولیت بخشی ، جب، جو اور جیسا لکھا قلم کار نے ہمیشہ من و عن شائع کیا۔ حتی کہ قطر سعودیہ تنازعہ پر لکھا میرا ایک کھلا خط جو کہ پاکستانی جریدے نواز حکومت کی وجہ کر اور سعودی جریدے اپنی گورنمنٹ کی وجہ سے شائع کرنے سے قاصر تھے قلم کار نے وہ مکتوب من و عن شائع کیا ۔
جسے میرے حلقہ احباب کے پڑھنے والوں نے سراہا بھی ۔۔۔جوکہ یقینا میرے لیئے قابل فخر بات ہے ۔  !قلم کار اس جرآت مردانہ کو سلام۔ قلم کار انتظامیہ کی تہہ دل سے مشکور ہوں کہ ان کے اعتماد کی بدولت میری تحاریر کا سفر جاری رہا.
لکھتی تو پہلے بھی تھی لیکن قلم کار کی ویب سائیٹ کی بدولت لکھاریوں کی صف میں کھڑے ہونے کی جستجو جاگی، چاہے آخری صف کا آخری رکن ہی سہی۔! لیکن قدم بہ قدم ہی تو کامیابی ملتی ہے ۔۔! تو انشاء اللہ ہمیں بھی مستقبل قریب میں جو کامیابیاں نصیب ہوں گی اس میں قلم کار کا بڑا ہاتھ ہوگا۔۔
 یہ فورم سراہنے کے قابل ہے کہ نوآموز لکھاریوں کو موقع دیتا ہے کہ اپنے قلم کا زنگ اتار پھینکیں ۔۔لکھیں۔۔۔اور بلا خوف و خطر لکھیں
جس تیزی کے ساتھ یہ ویب سائیٹ اپنے لکھنے اور پڑھنے والوں میں جگہ بنا رہی ہے امید ہے کہ جلد ہی وہ دن ضرور آئے گا جب اس کا شمار ملک کی چیدہ چیدہ  ویب سائیٹس میں ہونے لگے گا ۔
 ہماری دعائیں، محبتیں اور  پر خلوص جذبات قلم کار کے ساتھ ہیں ۔۔قلم کار  انتظامیہ کو سفر بخیر کی بہت بہت مبارکباد ۔ او مزید کامیابیوں اور کامرانیوں کے لیئے دعاگو  قلم کار ٹیم شاید آپ ہی کے لیے احمد فراز یہ شعر کہہ گئے تھے کہ۔۔!
  شکوہ ظلمت شب سے کہیں بہتر ہے
  اپنے حصے کی کوئی شمع جلائے جاتے۔۔
 خدا کرے کہ اپنے حصے کی یہ شمع جو آپ سب نے مل کر روشن کی ہے ہمیں ایک روشن اور تابناک صبح عطا کرے آمین۔۔۔
Views All Time
Views All Time
135
Views Today
Views Today
1
یہ بھی پڑھئے:   قلم کار بھی دشمن ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: