Skip to Content

Qalamkar | قلم کار

جہالت، ظلم اور ناانصافی کے خلاف برسرپیکار

قرب الہٰی بمقابلہ اللہ والی فیلنگ (حاشیے) | فرح رضوی

by جون 22, 2017 حاشیے
قرب الہٰی بمقابلہ اللہ والی فیلنگ (حاشیے) | فرح رضوی
Print Friendly, PDF & Email

ملک عزیز میں رمضان الکریم ان مہینوں میں سرفہرست ہے کہ جن میں روحانی فیوض و برکات کے حصول کا اجتماعی ماحول میسر ہوتا ہے. ہر مسلمان مرد و زن ، بزرگ اور جوان اپنے تئیں عبادت کی سعادت کے حصول میں کوشاں رہتا ہے. کوئی سماجی سرگرمیاں محدود یا پھر قطعاً ترک کر کے یکسوئی کے سمندر کی تہہ میں روحانیت کے گوہر نایاب تک رسائی چاہتا ہے تو کوئی مخلوق سے جڑ کر خالق کا قرب تلاش کرتا ہے. کسی کی نظر میں قرب الہی جیسی نعمت ، "عقیدت” کے سفر کی آخری منزل ہے تو کسی کی نظر میں” اعمال کی درستگی” ، غرضیکہ ہر ایک بندگی کا دعویدار اور نجات کا طلبگار ہے اور اسی کوشش میں لگا ہے کہ کسی طرح اپنے رب کو راضی کر کے اسکا قرب حاصل کرنے میں کامیاب ہو جائے.
جس کا جتنا دم ہے ، اسی قدر منزل کی جانب دوڑ رہا ہے. کسی کی دوڑ محلے کی مسجد تک ہے تو کسی کی خانہء خدا تک.
وہ جو "آتے ہیں وہی جن کو سرکار بلاتے ہیں” گنگناتے ہوئے داخل حرم ہوتے ہیں، انکے دل بھی ویزے کو نجات کا پروانہ سمجھتے ہیں. پروردگار سب کا بھرم اور پردہ قائم رکھے اور تمام دعائیں اور عبادتیں قبول فرمائے.
ان معطر اور پاک فضاؤں سے مہکتی رحمتیں ، ایمان تازہ کرتی ہوئی روحانیت کی کیفیت سے سرشار کر دیتی ہیں. کوئی کم نصیب ہی ہوگا جو ایسے میں بھی محروم رہ جائے.
ہر زائر کے تجربات اور محسوسات ہوتے ہیں جو وہ اپنے الفاظ میں بیان کرتا ہے. جن خوش نصیب کی قسمت نے پہلے سے یاوری کی ہوتی ہے وہ بھی نئے آنے والے سے ضرور احوال دریافت کرتا ہے. کچھ اسکی سنتا ہے ، کچھ اپنی کہتا ہے.
ایک ایسے ہی با سعادت موقعے کا قصہ ہے کہ ایک جاننے والی خاتون حج بیت اللہ کے سفر سے لوٹی تھیں. خاتون کے اعزاز میں ایک عشائیے کا اہتمام کیا گیا. محترمہ کے شوہر اعلیٰ سرکاری عہدیدار تھے اور یہ سعادت "وی آئی پی ” پیکج پر حاصل ہوئی تھی. گفتگو کا سلسلہ جاری تھا. لمحے لمحے کی روئداد میں قیام و طعام کی بہترین سہولیات کی معمولی سے معمولی تفصیل بھی شاملِ احوال تھی اور سامع خواتین پر سحر سا طاری تھا. خواتین کے انہماک میں خلل اس وقت واقع ہوا جب ایک خاتون نے سوال داغا کہ بیگم صاحبہ! کچھ روحانی کیفیت کے بارے میں بھی بتائیے؟ اس پر مذکورہ محترمہ نے ایک لمحے کو توقف کیا اور بڑی بےنیازی سے گویا ہوئیں؛” دیکھیں جی! جب آپ ایسے روح پرور ماحول کا حصہ ہوتے ہیں تو پھر اللہ والی فیلنگ تو آ ہی جاتی ہے. "

Views All Time
Views All Time
787
Views Today
Views Today
1
یہ بھی پڑھئے:   پسند (حاشیے) | ذیشان حیدر نقوی
Previous
Next

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

%d bloggers like this: