Skip to Content

Qalamkar | قلم کار

جہالت، ظلم اور ناانصافی کے خلاف برسرپیکار

ایوری تھنگ از پلانڈ | مصلوب واسطی

by جون 19, 2017 بلاگ
ایوری تھنگ از پلانڈ | مصلوب واسطی
Print Friendly, PDF & Email

بچپن سے سنتے آئے تھے کہ دنیا گول ہے۔ کچھ بڑے ہوئے تو معلوم ہوا کہ نہیں بھائی یہ بیضوی یعنی اوول ہے۔ اب تک کی عمر اسی مخمصے میں گذار دی لیکن گئے دن تصدیق ہوئی کہ واقعی دنیا "اوول” ہے اور وجہ ہے چیمپئنز ٹرافی کے لئے پاکستان اور بھارت کا فائنل مقابلہ۔ آئیے دیکھیں کہ ہوا کیا ہے اوول کی دنیا میں۔
اظہر علی نے پہلا اوور کھیلنا شروع کیا اور وہی روایتی سست روی۔ بھارتی کپتان مطمئن ہیں کہ آغاز ان کے پلان کے مطابق ہے۔ وہ اپنے بولر کو ہدایت کرتے ہیں کہ پلان آگے بڑھاؤ اور فخر زمان کو بلاک کرو تا کہ تیز رنز نہ بن پائیں۔ بالر پروفیشنل کرکٹر کی طرح کپتان کی ہدایت پر عمل کرتے ہیں، فخر مشکلات کا شکار ہے اور اظہر علی ۔ ۔ ۔ ۔ یہ ۔ ۔ یہ کیا ہو رہا ہے؟ آٹھویں اوور میں 48 کا ہندسہ دیکھ کر کوہلی صاحب چکرا ہی گئے۔ اظہر علی کو روکو، بالر تبدیل کرو ۔ ۔ ۔ لیکن اب دیر ہو چکی ہے مجموعہ سو رنز کو چھو رہا ہے اور پھر ایک ہی اوور میں دونوں بیٹسمین اپنی اپنی ففٹی مکمل کر گئے۔ ویرات کوہلی پریشان لیکن پاکستانی کھلاڑیوں کی غلطی کے منتظر ہیں اور وہ لمحہ جلد ہی آ گیا۔ اظہر علی رن آؤٹ ہو گئے اور بابر اعظم نے ان کی جگہ لی۔ بھارتی ٹیم نے نئے آنے والے پر دباؤ بڑھا دیا کہ فخر سے تو پہلے ہی تیز رنز نہیں بن رہے۔ اب پھر ایک گھٹنا گھٹ گئی، بھارتی پلان کے مطابق بابر سے سنگل بھی نہیں لی جا رہی لیکن اب فخر کا بلا اندھا دھند رنز اگلنے لگا۔ رام کرشن کر کے سینکڑہ جڑنے والے فخر سے جان چھوٹی اور شعیب ملک آئے۔ بھارتی خوش ہیں کہ بابر تو قابو میں ہے ہی اب ملک کو روک لو تو تین سو نہیں بنیں گے۔ بالرز نے یہی کیا لیکن اچانک بابر کو جیسے کسی نے سوتے سے جگا دیا۔ بڑی مشکل سے بھارتی گیند بازوں نے ان دونوں کو پویلین پہنچایا کہ کچھ سکون ملے۔ بھارتی ٹیم سوچ رہی تھی کہ آج حفیظ بہت دباؤ میں ہے دوسری طرف سے وکٹیں گرا لو۔ اب کی بار حفیظ نے جو بلا چلایا تو کوہلی کو سمجھ آئی، باپ رے یہ تو سب ڈرامہ ہے۔ نیا آنے والا دب کے کھیلتا ہے اور سینئیر پارٹنر مار کاٹ شروع کردیتا ہے۔ جب سمجھ آئی تو 46 اوور میں 307 رنز بن چکے تھے اور پاکستان ایکسپریس کو روکتے روکتے بھی 338 پہ جا کر بریک لگی۔

یہ بھی پڑھئے:   سال 2018 ۔۔۔ خیال رکھنا

باری شروع ہونے سے پہلے بھارتی کوچ کپتان سر جوڑ کر بیٹھے کہ جو ہوا سو ہوا، بالنگ میں پاکستان کی کمزوری ڈھونڈو۔ لیپ ٹاپ سنبھالے ایک شخص نے بتایا کہ اصل خطرہ جنید خان اور حسن علی سے ہے، عامر پورا فٹ نہیں اور ٹورنامنٹ میں اب تک کل 2 وکٹ لے پایا ہے، شاداب خان بچہ ہے اور عماد تو آج گنتی میں ہی نہیں۔ کوچ کپتان نے اسی نقطے کو مرکز بنا کر حکمت عملی بلے بازوں کو دی۔ حکمت پر عمل شروع ہوا اور پھر وہی غلطی ۔ ۔ ۔ ہاف فٹ عامر پہلی تین وکٹ لے اڑا اور معصوم بچہ شاداب چھ چھکوں والی سرکار کی جڑوں میں بیٹھ گیا۔ اس کے بعد جو ہوا اس پہ کسی کو یقین نہیں۔ حسن علی کی گیند پر سرفراز نے آخری بھارتی کھلاڑی کا کیچ تھاما تو گہری ترین بیٹنگ لائن رکھنے والی تمام ٹیم 158 پہ پویلین پہنچ گئی۔ پاکستان نے چیمپیئنز ٹرافی 2017 کا فائنل بآسانی اپنے نام کر لیا۔

https://i0.wp.com/images.indianexpress.com/2016/08/mickey-arthur-m.jpg?resize=217%2C121اوول فائنل کے اختتام پر پاکستانی کوچ مکی آرتھر نے مجسم سوال بنے پریشان بھارتی کوچ سے ہاتھ ملایا تو لگا کہ ان کی شرارتی آنکھیں بالی ووڈ فلم "اجنبی” کے کلائمیکس سین کی طرح ۔ ۔ ۔ میچ کے بعد کمبلے کو پاکستانی ٹیم کا اصل گیم پلان سمجھ آنے پر ۔ ۔ ۔ فلم کا مشہور ڈائیلاگ دوہرا رہی ہیں ۔ ۔ ۔ ایوری تھنگ از پلانڈ۔

Views All Time
Views All Time
417
Views Today
Views Today
1
Previous
Next

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

%d bloggers like this: