جس عہد میں لٹ جائے فقیروں کی کمائی

Print Friendly, PDF & Email

hunger_3یہ واقعہ سردیوں کے دنوں کا ہے جب میں تقریباًصبح کے 6 بجے اپنے گھر سے دودھ لینے دکان پر جا رہا تھا ہمرا گھر تقریباً جی ٹی روڈ پر ہی ہے میں جی ٹی روڈ کی دیوار کے ساتھ ساتھ چل رہا تھا دندھ کافی زیادہ تھی ذرا سا آگے آیا تو دیکھا ایک سانولے رنگ کا لڑکا جسکا لباس سادہ اور گندا تھا اوراوپر کھیس نما چادر لی ہوئی تھی اور پاس ایک کولر پڑا ہوا تھا میں نے دیکھا کے وہ لڑکا شاید قے کرنے کی کوشش کر رہا تھا اور ساتھ ساتھ کانپ رہا تھا میں یہ سب دیکھ کر اس کے قریب آیا اور پوچھا کیا ہوا ہے .؟
> تو اس نے کانپتے ہوے کہا کہ بھائی الٹی آ رہی ہے پر کچھ نکل نہیں رہا پیٹ سے الٹی آتی لیکن بس ہوا ہی نکل رہی گئی منہ سے میں نے اسکی حالت دیکھتے ہوے اسکے ماتھے پر ہاتھ رکھا اسکا ماتھا تپ رہا تھا میں نے کہا تمے تو بہت زیادہ بخار ہے اس نے سینے پر تیر چلاتے ہوے کہا کے صاحب جی کچھ کھایا ہی نہیں دو دن سے
> میں نے پوچھا اس کولر میں کیاہے اس نے کہا کے اس میں انڈے ہیں میں کچھ بولتا کے اسنے کہاصاحب جی 6 انڈے ہیں ویسے 15 کا ایک انڈا ہے اپ 10 دے دیجیے گا صاحب جی ساری رات میں صرف 6 انڈے ہی بکے صاحب جی آپ سے ہاتھ جوڑ کر کہتا ہوں کے انڈے خرید لیجیے اسنے ہاتھ جوڑتے ہوے کہا میں کچھ بولتا کے اس نے خنجر چلاتے ہوے کہا کے صاحب جی دو دن سے گھر میں کچھ نہیں پکا اس نے میرے جسم کو چیرتے ہوے کہا . یہ انڈے ماں دکان سے لے کرآئی تھی اور گھر میں اوبالے تھے جب اسنے اگلی بات کی تو میرا ماتم کرنے کو دل کیا اس نے کہا کے صاحب جی مہربانی ہو گی لے لیجیے کیوں کے ماں دکاندار سے انڈےادھار لے کر آئی ہے یہ سننے کے بعد میرے سے نہ رہا گیا اور میں رونے لگا

Views All Time
Views All Time
487
Views Today
Views Today
1
یہ بھی پڑھئے:   کھراب سسٹم کی کھراب نیکیاں-مستنصر حسین تارڑ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: