Skip to Content

Qalamkar | قلم کار

جہالت، ظلم اور ناانصافی کے خلاف برسرپیکار

ترکی: چیک پوسٹ پر کار بم دھماکے سے دس فوجیوں سمیت 18 ہلاک

by اکتوبر 9, 2016 ہیڈ لائن
ترکی: چیک پوسٹ پر کار بم دھماکے سے دس فوجیوں سمیت 18 ہلاک
Print Friendly, PDF & Email


ترکی میں حکام کے مطابق ملک کے جنوب مشرقی حصے میں ایک چیک پوسٹ پر کرد جنگجوؤں کے کار بم حملے میں کم از کم دس فوجیوں سمیت 18 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

turk-blastاتوار کو دورک کے مقام پر یہ حملہ اس وقت ہوا جب فوجیوں نے ایک کار کو چیک کرنے کے لیے روکا۔

ترک حکام کی جانب سے اس حملے کا الزام کرد باغیوں پر عائد کیا گیا ہے۔

حکام کی جانب سے جاری کردہ بیان میں بتایا گیا ہے کہ اس حملے میں 26 افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں دس فوجی شامل ہیں۔

تاحال کسی نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی۔

خیال رہے کہ ترکی کئی دہائیوں سے کرد علاقوں میں شورش کا سامنا کر رہا ہے اور اس کو خدشہ ہے کہ ہمسایہ ملک شام میں کردوں کی کامیابیوں سے ترکی میں بھی کرد علیحدگی پسندوں کو تقویت ملے گی۔

ترکی کی فوج کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق یہ حملہ صوبہ ہکاری کے قصبے سیمدنلی سے 20 کلومیٹر فاصلے پر قائم ایک فوجی چوکی پر مقامی وقت کے مطابق صبح نو بج کر 45 منٹ پر ہوا۔

صوبائی گورنر کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں نے پہلے چیک پوسٹ پر تعینات فوجیوں پر فائرنگ کی اور بعد میں منی وین کو دھماکے سے اڑا دیا۔

یہ بھی پڑھئے:   دنیا کی تین ہزار زبانوں کے خاتمے کا خطرہ

ترک فوج کی جانب سے ملک کے جنوب مشرقی علاقوں میں کی گئی کارروائیوں میں سینکڑوں افراد ہلاک ہو چکے ہیں

ترک وزیراعظم بن یامین یلدرم کا کہنا تھا کہ اس حملے میں ‘ایک خودکش بمبار نے وین میں لدے پانچ ٹن دھماکہ خیز مواد کو اڑایا۔’

واضح رہے کہ گذشتہ سال ترکی اور کرد باغیوں کے درمیان جنگ بندی کے معاہدے کے خاتمے کے بعد سے کرد جنگجو تنظیم ’پی کے کے‘ نے ترک سکیورٹی فورسز کو متعدد مرتبہ نشانہ بنایا ہے۔

دوسری جانب سے ترک فوج کی جانب سے ملک کے جنوب مشرقی علاقوں میں کی گئی کارروائیوں میں سینکڑوں افراد ہو ہلاک چکے ہیں۔

ترک حکومت ’پی کے کے‘ کے مکمل طور پر غیرمسلح ہونے تک ان ساتھ مذاکرات سے انکار کرتی ہے۔

Views All Time
Views All Time
242
Views Today
Views Today
1
Previous
Next

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

%d bloggers like this: